ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Maen Kahin Aur Ja Nahin Sakta | میں کہیں اور جا نہیں سکتا
Ghazlen - غزلیں

زبان دے کے عجب بے زبانی دیتا ہے

زبان دے کے عجب بے زبانی دیتا ہے
کوئی تو ہے جو مجھے رائیگانی دیتا ہے
یہ ریگزار ضروری نہیں سبھی کو مِلیں
یہ میرا عشق ہے تازہ کہانی دیتا ہے
وہ کاٹتا ہے سبھی خشک ٹہنیا ں اور پھر
مری جڑوں میں محبت کا پانی دیتا ہے
بنا تو لی ہے محبت کی سلطنت میں نے
نہ جانے کس کو خدا حکمرانی دیتا ہے
ہر ایک شخص یہی دیکھنے کو بیٹھا رہا
تمہارا ہجر کِسے کیا نشانی دیتا ہے
وہ مجھ کو پھول تو تازہ ہی بھیجتا ہے ندیمؔ
مگر کتاب ہمیشہ پرانی دیتا ہے