ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Maen Kahin Aur Ja Nahin Sakta | میں کہیں اور جا نہیں سکتا
Ghazlen - غزلیں

یونہی اِس عشق میں اِتنا گوارا کر لیا جائے

یونہی اِس عشق میں اِتنا گوارا کر لیا جائے
کسی پچھلی محبت کو دوبارا کر لیا جائے
شجر کی ٹہنیوں کے پاس آنے سے ذرا پہلے
دعا کی چھائوں میں کچھ پل گزارا کر لیا جائے
ہمارا مسئلہ ہے مشورے سے اب بہت آگے
کسی دن احتیاطاً استخارا کر لیا جائے
مِرا مقصد یہاں رکنا نہیں بس اِتنا سوچا ہے
سفر سے پیشتر اُس کا نظارہ کر لیا جائے
محبت ہی وہ سودا ہے کہ جس میں باعثِ برکت
خسارا ہو رہا ہو تو خسارا کر لیا جائے
حوالے کر کے اپنا جسم اک دن تیز لہروں کے
پھر اُس کے بعد دریا سے کنارا کر لیا جائے
ندیم ؔاس شہر میں مانوس گلیا ں بھی بہت سی ہیں
جو آئے ہیں تو اب اِن کا نظارا کر لیا جائے