ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Maen Kahin Aur Ja Nahin Sakta | میں کہیں اور جا نہیں سکتا
Ghazlen - غزلیں

تیر ، نیزے ، ڈھال اور تلوار دے کر آگیا

تیر ، نیزے ، ڈھال اور تلوار دے کر آ گیا
اپنا سب کچھ ہی سپہ سالار دے کر آگیا
ہارنے کے خوف سے یہ فیصلہ کرنا پڑا
جنگ سے پہلے میں سب ہتھیار دے کر آگیا
عین ممکن ہے وہ میرا نام تک رہنے نہ دے
میں جو اُس کو اپنے سب آثار دے کر آگیا
وقت نے دہرا دیا قصّہ مرے اسلاف کا
اہلِ مکّہ کو میں پھر گھر بار دے کر آگیا
اپنے حصّے کی حکومت بھی اُسی کو سونپ دی
میں ندیم ؔاُس کو بھرا دربار دے کر آگیا