ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Tumharay Saath Rehna Hai | تمہارے ساتھ رہنا ہے
Ghazlen - غزلیں

صفحے پلٹ رہا ہوں میں شعر سنا رہا ہوں میں

صفحے پلٹ رہا ہوں میں ، شعر سنا رہا ہوں میں
اپنا یقین اس طرح خود  کو  دلا رہا ہوں میں
کھونا تھا جس کو کھو چکا، رونا تھا جتنا رو چکا
خود سے مذاق کرکے اب خود کو ہنسا رہا ہوں میں
عمر گزر گئی مِری ہجر کی تلخیوں میں دوست
پھر بھی کسی کو وصل کے خواب دکھا رہا ہوں میں
 کوزہ گری کے شوق میںیہ بھی خبرنہیں مجھے
خود کو ہی توڑ توڑ کر کس کو بنا رہا ہوں میں
شہر بھی بس ہی جائے گا لوگ بھی آہی جائیں گے
چھائوں اُگانے کے لیے پیڑ اُگا رہا ہوںمیں
تیرا خیال آگیا وقتِ وصال آ گیا
سو تِرے انتظار میں گھر کو سجا رہا ہوں میں
عمر گزارنی تھی سو عمر گزار دی گئی
غم یہ رہا تمام عمر تجھ سے جدا رہا ہوںمیں
جانے یہ کیسا خوف ہے جس کے سبب مِرے ندیمؔ
یاد جسے نہیں کیا ، اُس کو بھُلا رہا ہوں میں