ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Tumharay Saath Rehna Hai | تمہارے ساتھ رہنا ہے
Ghazlen - غزلیں

سفر کی دھول کو چہرے سے صاف کرتا رہا

سفر کی دھول کو چہرے سے صاف کرتا رہا
میں اُس گلی کا مسلسل طواف کرتا رہا
یہ میری آنکھ کی مسجد ہے پائوں دھیان سے رکھ
کہ اِس میں خواب کوئی اعتکاف کرتا رہا
میں خود سے پیش بھی آیا تو انتہا کردی
مجھ ایسے شخص کو بھی وہ معاف کرتا رہا
اور اب کھُلا کہ وہ کعبہ نہیں تِرا گھر تھا
تمام عمر میں جس کا طواف کرتا رہا
میں لَو میں لَو ہوں ،الائو میں ہوں الائو ندیمؔ
سو ہر چراغ مرا اعتراف کرتا رہا