ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Maen Kahin Aur Ja Nahin Sakta | میں کہیں اور جا نہیں سکتا
Ghazlen - غزلیں

قیس و لیلیٰ کا طرفدار اگر مر جائے

قیس  و  لیلیٰ کا  طرفدار  اگر مر جائے
میں بھی مر جائوں یہ کردار  اگر مر جائے
پھر خدایا تجھے سورج کو بجھانا ہو گا
آخری شخص ہے بیدار اگر مر جائے
چھُپنے والے تُو کبھی سوچ کہ اِک دن بالفرض
یہ مری خواہش دیدار اگر مر جائے
باندھ رکھی ہو قبیلے نے توقع جس سے
اور اچانک ہی وہ سردار اگر مر جائے
عین ممکن ہے کہ آجائے مرا نام کہیں
شہرِ لیلےٰ کا گنہگار اگر مر جائے
منتظر جس کی یہ آنکھیں ہیں کئی برسوں سے
اور وہ چاند بھی اُس پار  اگر مرجائے