ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Dar Haqeeqat | در حقیقت
Ghazlen - غزلیں

جب لوگ خدا بدل رہے تھے

جب لوگ خدا بدل رہے تھے
ہم صحرا میں بیٹھے جل رہے تھے
کچھ خواب بنا رہے تھے اپنے
کچھ درد کہیں سنبھل رہے تھے
اس باغ میں کوئی بھی نہیں تھا
دو پھول وہاں پہ چل رہے تھے
کشتی میں بھی شعر ہو رہے تھے
پانی پہ چراغ جل رہے تھے
کچھ نام کتاب پر لکھے تھے
اورپیڑ بھی پھول پھل رہے تھے
پانی میں اداسیاں بہت تھیں
دریا تھے ، مچل مچل رہے تھے
ہم اور کہیں کو جا رہے تھے
ہم اور کہیں کو چل رہے تھے