ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Maen Kahin Aur Ja Nahin Sakta | میں کہیں اور جا نہیں سکتا
Ghazlen - غزلیں

گزر رہا ہوں مگر وقت کے ارادے سے

گزر رہا ہوں مگر وقت کے اِرادے سے
مِرا وجود بندھا ہے ہوا کے دھاگے سے
کسے پکاروں بھلا کون چل کے آئے گا
یہاں پہ لوگ نظر آئے بھی تو آدھے سے
میں اِس جگہ سے کہیں اور جا نہیں سکتا
بندھا ہوا ہوں مکمل کسی کے وعدے سے
یہ چاند ٹوٹ کے قدموں میں کیوں نہیں گِرتا
یہ کھینچتا ہے مجھے چاندنی کے دھاگے سے
تغیّرات کی دنیاترا قصور نہیں
ترا وجود جو ممکن ہوا ارادے سے