ONLINE ORDER
Muhammad Nadeem Bhabha
Search Haal | حال
Ghazlen - غزلیں

اب یہاں کوئی دوسرا ہی نہیں

اب یہاں کوئی دوسرا ہی نہیں
میں بھی تنہا ہوں بس خدا ہی نہیں
ہجر تو بے شمار ہےمرے پاس
ہجر تو میرا مسئلہ ہی نہیں
خوف تھا خاک ہونے والا ہوں
اور ایسا تو کچھ ہُوا ہی نہیں
حُسنِ بے خوف تجھ کو کیا معلوم
تُو ابھی مجھ کو جانتا ہی نہیں
تجھ سے بڑھ کر کوئی نہیں مجھ کو
تجھ سے بڑ ھ کر کوئی ملا ہی نہیں
شاہزادے، تجھے مبارک ہو
تیری قسمت میں بادشاہی نہیں
تُو نہیں جانتا دھواں ہونا
عشق میں جل کے تُو بجھا ہی نہیں
کس لیے ہو کے ہم دکھائیں تجھے
جبکہ ہونے کا فائیدہ ہی نہیں
اب تو ملنا اِسی کو کہتے ہیں
خواب اب خواب تو رہا ہی نہیں